Powered by TheAquaSoft


Search Results: minister

طالبان سے بات چیت کے لئے دفتر کی ضرورت نہیں، مشیر خارجہ سرتاج عزیز

Published: Sep 30, 2013 Filed under: Latest Beats

مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ طالبان سے بات چیت کے لئے دفتر کی ضرورت نہیں وہ جہاں چاہیں بات چیت کے لئے تیار ہیں۔

امریکا میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا کہ دہشت گردی ایک خطرناک بیماری ہے اس کو ختم کرنے کی ہر ممکن کوشش کررہے ہیں، انہوں نے کہا کہ  طالبان سے بات چیت کے لئے دفتر کی ضرورت نہیں، طالبان بات چیت کے لئے جسے چاہیں نامزد کریں حکومت بات چیت کے لئے تیار ہے، پاکستانی حکومت ملک کے اندر طالبان سے بات کررہی ہے۔

سرتاج عزیز نے پشاور دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پشاور ایک خطرناک صورتحال سے دوچار ہے، قبائلی علاقوں سے قریب ہونے کی وجہ سے پشاور انتہاپسندوں کا آسان ہدف ہے، ان کا کہنا تھا کہ حکومت دہشت گرد حملوں کو روکنے کی کوشش کررہی ہے،  پاکستان کے اندر طالبان کا کوئی ایک گروپ نہیں بلکہ کئی دھڑے ہیں۔

http://www.express.pk/story/180851/


بھارتی وزیرخارجہ پاکستان پر الزامات کے بجائے اپنی فوج کے کشمیرمیں کرتوتوں پر توجہ دیں، چوہدری نثار

Published: Sep 30, 2013 Filed under: Latest Beats

وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار نے بھارتی وزیر خارجہسلمان خورشید کے آئی ایس آئی اور پاکستانی فوج پر الزامات کو بے بنیاد اور سفارتی آداب کے منافی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ سلمان خورشید بھارتی فوج کے کشمیر میں کرتوتوں پر توجہ دیں۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق سلمان خورشید کے بیان پر اپنےردعمل میں چوہدری نثار نے کہا کہ بھارتی حکمرانوں کا وطیرہ بن گیا ہے کہ وہ آئی ایس آئی اور پاک فوج پر الزامات سے نہیں کتراتے، بھارتی حکمرانوں کو چاہیے کہ وہ اپنی فوج پر توجہ دیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے غیرمہذب زبان کا استعمال میں نہ مانوں کی رٹ ہے، پاکستان فوج اور حکومت میں کسی بھی قسم کا کوئی اختلاف نہیں اور نہ غیرملکی حکمران کو پاک فوج اور آئی ایس آئی میں خلیج کے ذکر کا اختیار ہے۔

واضح رہے کہ بھارتی وزیر خارجہ سلمان خورشید نے نیو یارک میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے الزام عائد کیا تھا کہ پاکستانی فوج کی خفیہ ایجنسیاں حکومت کی امن کوششوں کو ناکام بنانے میں کردار ادا کر رہی ہیں، ہمیں ایسا بتایا جا رہا ہے کہ تمام ایجنسیوں میں اتفاق رائے ہے لیکن ایسا ہوتا تو صورتحال مختلف ہوتی۔

http://www.express.pk/story/180637/


پاک بھارت وزرائے اعظم ملاقات، امن عمل اور تجارت کو فروغ دینے پراتفاق

Published: Sep 29, 2013 Filed under: Latest Beats

پاکستانی وزیراعظم نواز شریف اور ان کے ہم منصب بھارتی وزیراعظم کی نیو یارک میں جاری ایک گھنٹہ طویل ملاقات ختم ہو گئی، ملاقات کے بعد بھارت کے قومی سلامتی کے مشیر شیو شنکر مینن نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ملاقات بہت مثبت رہی اور اس کے مستقبل پر اچھے اثرات مرتب ہوں گے۔

بھارت کے قومی سلامتی کے مشیر شیو شنکر مینن نے کہا کہ ملاقات میں سیاچن اور سر کریک کے معاملات پر بھی بات چیت کی گئی اور کشمیر، ممبئی حملوں کی تحقیقات اور دہشت گردی کے مسائل پر بھی گفتگو ہوئی۔ وزیراعظم نواز شریف سے سرحد پار دہشت گردی روکنے کا بھی مطالبہ کیا گیا، وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کو بھی دہشت گردی کے مسائل کا سامنا ہے، انہوں نے بلوچستان میں بھارتی مداخلت کا معاملہ بھی بھارتی وزیراعظم کے سامنے اٹھایا۔ ممبئی حملوں کی تحقیقات کے حوالے سے نواز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان کے جوڈیشل کمیشن نے ممبئی جا کر حملوں سے متعلق شواہد اکٹھے کئے ہیں جس کی روشنی میں تحقیقات کو آگے بڑھایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے ڈی جی ایم اوز کو ذمہ داری سونپی گئی ہے کہ وہ کنٹرول لائن پر کشیدگی کے خاتمے کے لئے اقدامات کریں۔

شیو شنکر مینن نے کہا کہ دونوں ممالک کے وزرائے اعظم نے باہمی تعلقات کو مستحکم بنانے کے لئے مذاکرات پر اتفاق کیا لیکن اس کے حوالے سے ابھی کوئی لائحہ عمل طے نہیں کیا گیا، انہوں نے کہا کہ دونوں فریق امن عمل کو مذاکرات کے ذریعے آگے بڑھانے پر اتفاق رکھتے ہیں اور دونوں نے تجارتی تعلقات کو بھی فروغ دینے کی بات کی ہے، ان کا کہنا تھا کہ تجارت کے لئے دونوں ممالک کی سرحدوں کو کھولنے کے حوالے سے بھی بات کی گئی، شیو شنکر نے کہا کہ دونوں ممالک ایک دوسرے کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی کرنے پر یقین نہیں رکھتے۔

بھارتی قومی سلامتی کے مشیرشیو شنکر نے کہا کہ دونوں وزرائے اعظم نے ایک دوسرے کو اپنے اپنے ممالک کا دورہ کرنے کی دعوت بھی دی جو دونوں کی جانب سے قبول کر لی گئی لیکن ان دوروں کی تاریخ ابھی طے نہیں کی گئی ہے۔

پاکستانی سیکریٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے ملاقات کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات کے ہمیشہ مثبت نتائج نکلے ہیں، ملاقات میں کشمیر سمیت تمام مسائل پر بات ہوئی اور کنٹرول لائن پر کشیدگی میں کمی لانے پر بھی اتفاق ہوا، انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان آئندہ مذاکرات کے لئے کوئی تاریخ طے نہیں ہوئی۔

http://www.express.pk/story/180602/


امریکی صدرکوڈرون حملے روکنے پرقائل کرنے کی کوشش کروں گا، وزیراعظم نوازشریف

Published: Sep 28, 2013 Filed under: Latest Beats

 وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت دفاعی بجٹ گنجائش کے مطابق بناتے توآج وسائل عوام کی فلاح وبہبود پرخرچ ہورہے ہوتے، امریکی صدرکوڈرون حملے روکنے پرقائل کرنے کی کوشش کروں گا۔

نیویارک میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ ملک میں بجلی کا بحران ایک آمر کی جانب سے پیدا کیا گیا، آمریت کے دور میں دودھ اور شہد کی نہریں نہیں بہی، جمہوری دور میں جو ترقی ہوئی اس کی مثال نہیں ملتی، اس دور میں سڑکیں بنی، ترقی کی رفتار تیز ہوئی، ایئرپورٹ تعمیر ہوئے، ییلو کیب آئی، انفرا اسٹرکچر کا جال بچھایا گیا اور ایک وہ وقت بھی آیا جب جمہوری حکومت نے ملک کو نیوکلیئر طاقت بنادیا، نواز شریف نے کہاکہ ہمارے حوصلے بلند تھے جو ہم نے ملک کو ایٹمی طاقت بنایا یہ کام کوئی ڈکٹیٹر کرسکتا تھا۔

وزیراعظم نے کہاکہ بڑے افسوس کا مقام ہے کہ پاکستان کے ساتھ ماضی میں بڑی زیادتیاں اور ظلم ہوتے رہے ہیں، دنیا ہمارا تماشہ دیکھتی تھی کہ پاکستان میں ایک جمہوری حکومت قائم ہوتی ہے لیکن ڈکٹیٹر اس پر قبضہ کرکے منتخب وزیراعظم کو جیل میں ڈال دیتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ اس میں کوئی شک نہیں کہ ملکی مسائل کے باعث بڑے چیلنجز درپیش ہیں، جتنے بڑے مسائل ہیں ہمارا عزم بھی اتنا بڑا ہے اب مشکلات کے باوجود ترقی کا دور دوبارہ شروع ہونے والا ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ انتخابات سے قبل قیاس آرائیاں کی جارہی تھی کہ کوئی پارٹی تنہا حکومت نہیں بنا سکے گی اور یہ بھی کہا جاتا تھا کہ ہوسکتا ہے مسلم لیگ(ن) زیادہ سیٹیں حاصل کرے لیکن وہ بھی 70 سے زیادہ نہیں ہوں گی۔ نواز شریف نے کہاکہ میں نے فیصلہ کرلیا تھا کہ اگر ہمیں اکثریت نہ ملتی تو میں وزیراعظم کا امیدوار نہ ہوتا ۔ اگر ہمیں 90 سیٹیں ملتی تو حکومت کی باگ ڈور 50 سیٹیں حاصل کرنے والوں کے سپرد کرتے۔

http://www.express.pk/story/180214/


Page 1 of 4