Powered by TheAquaSoft


Search Results: civil

اداکارہ ریما خان کا لاہور ایئرپورٹ پر قیمتی سامان سے بھرا بیگ گم ہوگیا

Published: Sep 27, 2013 Filed under: Latest Beats

پاکستانی اداکارہ ریما خان کا امریکا سے واپسی پر علامہ اقبال انترنیشنل ایئرپورٹ پر قیمتی سامان سے بھرا بیگ گم ہوگیا۔

ریما خان کے منیجر کا کہنا ہے کہ ریما امریکا سے عزیز و اقارب اور رشتے داروں کےلئے قیمتی تحائف لائی تھیں جو اس بیگ میں موجود تھے۔ انہوں نے کہاکہ بیگ کی گمشدگی کی رپورٹ ایئرلائن کو درج کرا دی گئی تاہم اس حوالے سے ہمیں ابھی تک کوئی تسلی بخش جواب نہیں دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ لاہور کے علامہ انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر مسافروں کا سامان چوری ہونا معمول بن چکا ہے۔ اس حوالے سے 13 ستمبر کو سیکریٹری سول ایوی ایشن نرگس سیٹھی نے لاہور ایئرپورٹ کے ہنگامی دورے کے دوران کہا تھا کہ علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ کسی طور انٹرنیشنل نہیں لگتا۔ یہاں ملی بھگت سے مسافروں کی قیمتی اشیاء نکال لی جاتی ہیں، سامان کی چوری میں ایئرپورٹ کے تمام ادارے ملوث ہوتے ہیں۔

http://www.express.pk/story/179880/


پشاور میں سرکاری ملازمین کی بس میں دھماکا، 17 افراد جاں بحق، 35 سے زائد زخمی

Published: Sep 27, 2013 Filed under: Latest Beats

سول سیکریٹریٹ کے ملازمین کی بس کواس وقت نشانہ بنایا گیا جب وہ ملازمین کو پشاور سے چارسدہ لے کر جارہی تھی

چارسدہ روڈ پر سرکاری ملازمین کی بس میں دھماکے کے نتیجے میں 17 افراد جاں بحق اور خواتین سمیت 35 سے زائد زخمی ہوگئے

ایکسپریس نیوز کے مطابق دھماکا گل بیلہ میں تھانہ کہوزئی کی حدود میں سرکاری ملازمین کی بس میں ہوا، بس میں 40 سے 50 سرکاری ملازمین سوار تھے جو پشاور سے چارسدہ جارہے تھے، دھماکے کے بعد پولیس نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے کر شواہد اکٹھے کرنا شروع کردیئے، امدادی ٹیموں نے بھی موقع پر پہنچ کر ابتدائی کارروائیوں کا آغاز کردیا ہے جبکہ زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ اور چارسدہ اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے تاہم زخمیوں میں سے بعض کی حالت تشویشناک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

پولیس کے مطابق دھماکا خیز مواد بس کے پچھلے حصے میں رکھا گیا تھا جس کے پھٹنے سے بس مکمل طور پر تباہ ہوگئی تاہم دھماکے میں کس نوعیت کا اور کتنا دھماکا خیز مواد استعمال ہوا اس سے متعلق ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا۔

کمشنر پشاور صاحبزادہ انیس نے جائے وقوعہ پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ دھماکے کی نوعیت خودکش نہیں لگتی تاہم ابتدائی تفتیش کے بعد ہی اس سے متعلق کچھ بھی حتمی طور کہا جاسکتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حملہ آوروں کا نشانہ بننے والی بس میں سول  سیکریٹریٹ کے ملازمین سوار تھے


Page 1 of 1