Powered by TheAquaSoft


Search Results: bomb

لاہور: پرانی انار کلی فوڈ اسٹریٹ میں دھماکا، ایک شخص جاں بحق، متعدد افراد زخمی

Published: Oct 10, 2013 Filed under: Latest Beats
دھماکا انتہائی زوردار تھا جس کی آواز دور دور تک سنائی دی اور قریبی واقع عمارتوں اور ہوٹلوں کو بھی شدید نقصان پہنچا

پرانی انار کلی فوڈ اسٹریٹ میں ہوٹل میں دھماکے کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق اور خاتون سمیت متعدد افراد زخمی ہوگئے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق دھماکا پرانی انار کلی فوڈ اسٹریٹ میں واقع سندھی بریانی کے ہوٹل میں ہوا جس کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق اور خاتون سمیت متعدد افراد زخمی ہوئے، دھماکا انتہائی زوردار تھا جس کی آواز دور دور تک سنائی دی اور قریبی واقع عمارتوں ہوٹلوں اور دکانوں کو بھی شدید نقصان پہنچا، پولیس اور ریسکیو ٹیموں نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور شواہد اکھٹے کرنا شروع کردیئے، بم ڈسپوزل اسکواڈ نے بھی موقع پر ابتدائی کارروائیوں کا آغاز کردیا ہے جبکہ زخمیوں کو میو اور گنگا رام اسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے تاہم زخمیوں میں بعض کی حالت تشویشناک ہے جس کے باعث ہلاکتوں کا خدشہ ہے۔

دھماکے کے وقت فوڈ اسٹریٹ کے مختلف ہوٹلوں میں کئی افراد ناشتے کے لئے جمع تھے جبکہ عینی شاہد کے مطابق ایک مشکوک شخص ہوٹل میں بیگ رکھ کر چلا گیا اور اس کے جانے کے تھوڑی دیر بعد دھماکا ہوگیا۔

پولیس کے مطابق دھماکا خیز مواد سندھی بریانی ہوٹل کے کاؤنٹر کے نیچے رکھا گیا تھا، دھماکا ٹائم ڈیوائس کے ذریعے کیا گیا جس میں ایک کلو بارودی مواد استعمال کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ چند ماہ قبل بھی اسی فوڈ اسٹریٹ میں واقع بخارا ہوٹل کو نشانہ بنایا گیا تھا جس میں کئی افراد جاں بحق اور زخمی ہوگئے تھے۔


پولیو مہم کے مرکز کے قریب دھماکہ، 6 ہلاک

Published: Oct 7, 2013 Filed under: Latest Beats

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور کے نواح میں ایک دھماکے میں چار اہلکاروں سمیت چھ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

مقامی پولیس نے بی بی سی اردو کو بتایا کہ یہ دھماکہ پیر کی صبح بڈھ بیر کے علاقے سلیمان خیل میں ایک بنیادی مرکزِ صحت کے باہر ہوا

پولیس کا کہنا ہے کہ بم دفتر کے سامنے نصب کیا گیا تھا اور اس کے پھٹنے سے پولیس کا ایک اہلکار، تین پولیس رضاکار اور امن کمیٹی کے دو ارکان مارے گئے۔

اطلاعات کے مطابق جس وقت دھماکہ ہوا مرکزِ صحت میں بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کی مہم کے ارکان جمع تھے اور بظاہر اس کا ہدف بھی وہی تھے۔

سلیمان خیل کا علاقہ پاکستان کے قبائلی علاقوں کے قریب واقع ہے اور ماضی میں بھی صوبہ خیبر پختونخوا اور قبائلی علاقوں میں پولیو کی ٹیموں پر حملے ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان میں گذشتہ کچھ عرصے کے دوران پولیو مہم میں حصہ لینے والے رضاکاروں اور ان کی حفاظت پر مامور سکیورٹی اہلکاروں پر حملوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

رواں برس مئی میں قبائلی علاقے باجوڑ ایجنسی میں انسداد پولیو ٹیم پر حملے میں ایک لیویز اہلکار ہلاک ہوا تھا۔ اس سے قبل اپریل میں مردان میں پولیو مہم کے کارکنان کی سکیورٹی پر مامور پولیس اہلکاروں پر حملے کے نتیجے میں ایک اہلکار ہلاک اور ایک زخمی ہو گیا تھا۔

گذشتہ سال بھی پولیو کے قطرے پلانے والے کارکنان پر کئی بار حملہ کیا گیا جس میں متعدد کارکنان ہلاک ہوئے تھے اور ان حملوں کے بعد ہی پولیو مہم میں حصہ لینے والے کارکنوں کے ساتھ پولیس اہلکار تعینات کیے گئے تھے۔

ان حملوں کے بعد اقوامِ متحدہ نے پاکستان میں جاری پولیو مہم میں شریک اپنے عملے کو واپس بلا لیا تھا اور یونیسف اور عالمی ادارۂ صحت کے فیلڈ سٹاف کو مزید احکامات تک پولیو مہم میں شرکت سے روک دیا تھا۔

پاکستان میں گذشتہ سال 58 بچوں میں پولیو کے وائرس کی تصدیق ہوئی تھی جن میں سے 27 کا تعلق خیبر پختونخوا جب کہ 20 کا تعلق فاٹا سے تھا۔

پاکستان میں انسدادِ پولیو کی مہم ایک عرصے سے جاری ہے لیکن اس کے باوجود اس وائرس کو مکمل طور پر ختم نہیں کیا جا سکا۔


قصہ خوانی بازار دھماکے کے جاں بحق افراد میں ایک ہی خاندان کے 18 افراد بھی شامل

Published: Sep 30, 2013 Filed under: Latest Beats
گزشتہ 8 روز میں پشاور کے مختلف علاقوں میں ہونے والے بم دھماکوں میں 130 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں

قصہ خوانی بازار دھماکے کے جاں بحق افراد میں ایک ہی خاندان کے 18 افراد بھی شامل ہیں۔

پشاور کے قصہ خوانی بازار میں خان رازق شہید پولیس اسٹیشن کے سامنے ہونے والے بم دھماکے میں 40 افراد جاں بحق ہوئے جن میں 18 کا تعلق ایک ہی خاندان سے ہے، چارسدہ کے علاقے شبقدر سے تعلق رکھنے والا یہ بدقسمت خاندان اپنے عزیزوں کو شادی کی دعوت دینے کے لئے پشاور میں آیا تھا لیکن انہیں کیا پتہ تھا کہ پشاور میں انہیں خوشیوں کے بجائے جنازوں کا تحفہ ملے گا۔

دھماکے کے وقت بدقسمتی سے یہ خاندان اسی جگہ خریداری میں مصروف تھا جسے دہشتگردوں نے اپنی بربریت کا نشانہ بنانے کا منصوبہ بنایا تھا، یہ بدقسمت خاندان اپنے کڑیل جوان کندھوں کے علاوہ 6 بچوں اور 2 خواتین سے بھی ہمیشہ کے لئے محروم ہوگیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ 8 روز میں پشاور کے مختلف علکاقوں میں ہونے والے بم دھماکوں میں 130 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں


پشاور میں سرکاری ملازمین کی بس میں دھماکا، 17 افراد جاں بحق، 35 سے زائد زخمی

Published: Sep 27, 2013 Filed under: Latest Beats

سول سیکریٹریٹ کے ملازمین کی بس کواس وقت نشانہ بنایا گیا جب وہ ملازمین کو پشاور سے چارسدہ لے کر جارہی تھی

چارسدہ روڈ پر سرکاری ملازمین کی بس میں دھماکے کے نتیجے میں 17 افراد جاں بحق اور خواتین سمیت 35 سے زائد زخمی ہوگئے

ایکسپریس نیوز کے مطابق دھماکا گل بیلہ میں تھانہ کہوزئی کی حدود میں سرکاری ملازمین کی بس میں ہوا، بس میں 40 سے 50 سرکاری ملازمین سوار تھے جو پشاور سے چارسدہ جارہے تھے، دھماکے کے بعد پولیس نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے کر شواہد اکٹھے کرنا شروع کردیئے، امدادی ٹیموں نے بھی موقع پر پہنچ کر ابتدائی کارروائیوں کا آغاز کردیا ہے جبکہ زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ اور چارسدہ اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے تاہم زخمیوں میں سے بعض کی حالت تشویشناک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

پولیس کے مطابق دھماکا خیز مواد بس کے پچھلے حصے میں رکھا گیا تھا جس کے پھٹنے سے بس مکمل طور پر تباہ ہوگئی تاہم دھماکے میں کس نوعیت کا اور کتنا دھماکا خیز مواد استعمال ہوا اس سے متعلق ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا۔

کمشنر پشاور صاحبزادہ انیس نے جائے وقوعہ پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ دھماکے کی نوعیت خودکش نہیں لگتی تاہم ابتدائی تفتیش کے بعد ہی اس سے متعلق کچھ بھی حتمی طور کہا جاسکتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حملہ آوروں کا نشانہ بننے والی بس میں سول  سیکریٹریٹ کے ملازمین سوار تھے


خون کے دھبے - جاوید چوھدری

Published: Sep 26, 2013 Filed under: Columns Javed chaudhry
میرے پاوٗں سے ٹکرانے والا وہ کویُ ربڑکا ٹکڑا نھیں بلکہ ایک معصوم بچے کے کی انگلی تھی جو بم دھماکے میں کٹ گیُ تھی


پشاور:گرجا گھر میں یکے بعد دیگرے دوخودکش دھماکے،جاں بحق افراد کی تعداد 56ہوگئی

Published: Sep 22, 2013 Filed under: Latest Beats

کوہاٹی گیٹ میں واقع  گرجا گھر میں یکے بعد دیگرے دو خودکش دھماکوں سے جاں بحق افراد کی تعداد56 ہوگئی ہے جبکہ سو سے زائد افراد زخمی ہیں 

ایکسپریس نیوز کے مطابق پشاور کے علاقے کوہاٹی گیٹ میں واقع سینٹ جان چرچ میں اتوار کے روز ہونے والی خصوصی دعائیہ تقریب میں شرکت کے بعد مسیحی برادری کے سیکڑوں افراد باہر آرہے تھے کہ ایک خودکش حملہ ہوا جس کے فوری بعد دوسرے حملہ آور نے بھی اپنے آپ کو ہجوم میں آکر دھماکا خیز مواد سے اڑا دیا۔ دھماکے کے  نتیجے میں 56 افراد جاں بحق جبکہ درجنوں زخمی ہوگئے ہیں، جاں بحق ہونے والوں میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں، مقامی ریسکیو اہلکاروں نے لاشوں اور زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ اسپتال پہنچادیا گیا ہےتاہم چھٹی کا روز ہونے کے باعث اسپتال میں طبی عملے کی تعداد انتہائی کم ہے جس کی وجہ سے زخمیوں کو طبی امداد کی فراہمی میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔اسپتال میں زخمیوں کی تعداد زیادہ ہونے کی وجہ سے بستروں کی تعداد کم پڑ گئی ہے جبکہ تابوت بھی ختم ہوگئے ہیں جس کے باعث میتوں کی ورثا کو حوالگی میں بھی مشکلات پیش آرہی ہیں۔پولیس اور سیکیورٹی اہلکاروں کی بھاری نفری نے دھماکے کی جگہ اور علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے، تحقیقاتی ٹیموں نے خودکش حملہ آورکےجسمانی اعضاء سمیت دیگر شواہد بھی قبضے میں لےلئے ہیں۔

دھماکے کے بعد مشتعل ہجوم نے سیکیورٹی کے ناقص انتظامات پر احتجاج کرتے ہوئے چرچ روڈ پر احتجاج کیا اور وہاں پولیس کی ودریوں کو نذر آتش کیا دوسری جانب لیڈی ریڈنگ اسپتال میں سہہولیات اور طبی عملے کی کمی پر بھی عوام میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے۔

صدر مملکت ممنون حسین، وزیر اعظم نواز شریف، ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین اور عوامی نیشنل پارٹی کے ترجمان زاہد خان نے پشاور کی شدید مذمت کرتے ہوئے جاں بحق افراد کے لواحقین سے گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔ اے این پی  اور کونسل برائے عالمی مذاہب کی جانب سے 3 روزہ سوگ کا اعلان کیا گیا ہے، کونسل برائے عالمی مذاہب کے مطابق ملک بھر کے تمام مشنری تعلیمی ادارے 3 دن تک بند رہیں گے۔


Page 1 of 2