Powered by TheAquaSoft

ٹیم منیجر معین خان نے نگران چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی کو  دورئہ زمبابوے کی رپورٹ پیش کر دی۔

انھوں نے اسکواڈ میں اکھاڑ پچھاڑ کی مخالفت کی ہے، ان کے مطابق کپتان مصباح الحق کے بجائے ان کی سوچ تبدیل کرنے کی ضرورت ہے، سابق قائد نے محمد حفیظ کو پاکستان کا اثاثہ قرار دیتے ہوئے متواتر ناکامیوں کے باوجود ٹیسٹ کھلاتے رہنے کا کہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق زمبابوے کیخلاف سیریز میں بطور منیجر فرائض انجام دینے والے معین خان نے بورڈ کے سربراہ کو اپنی رپورٹ پیش کردی، انھوں نے ٹیم کی بہتری کیلیے تجاویز بھی دی ہیں، سابق کپتان کے مطابق بدقسمتی سے جونیئرزتوقعات پر پورا نہ اتر سکے لیکن تجربہ کار کھلاڑیوں نے حسب معمول شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

بعد ازاں میڈیا سے بات چیت میں انھوں نے کہا کہ قائم مقام چیئرمین کے ساتھ ملاقات مثبت رہی جس میں دورئہ زمبابوے کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ دی ہے،انھوں نے سابقہ موقف دہراتے ہوئے کہا کہ ٹیم خراب نہیں کھیلی بلکہ ٹوئنٹی 20 اور ون ڈے سیریز میں کامیابی حاصل کی جبکہ ٹیسٹ سیریز برابررہی، جس ون ڈے اور ٹیسٹ میں ہمیں شکست کا سامنا رہا ان میں حریف نے بہتر کھیل پیش کر کے کامیابی حاصل کی، اسے کریڈٹ ضرور دینا چاہیے۔ معین خان نے کہا کہ پاکستان کرکٹ ٹیم میں کچھ خامیاں ضرور ہیں جنھیں دور کرنے کی ضرورت ہے، اچھے نتائج کیلیے کھلاڑیوں کو مزید محنت کرنی چاہیے۔ سابق کپتان نے کہا کہ مستقبل قریب میں ہونے والی سیریز کے دوران اسکواڈ میں وسیع پیمانے پر تبدیلیوں کے بجائے موجودہ کھلاڑیوں پر ہی انحصار کرنا ہوگا، بڑی تبدیلیاں بعض اوقات بہتری کے بجائے خرابیوں کا باعث بن جاتی ہیں

Post your comment

Your name:


Your comment:


Confirm:



* Please keep your comments clean. Max 400 chars.

Comments

Be the first to comment