حکمت اللہ پر الزام ہے کہ اس نے گزشتہ سال افغانستان میں آسٹریلوی فوجیوں کو فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا

افغانستان میں 3 آسٹریلوی فوجیوں کے قتل کے مبینہ ملزم سابق افغان فوجی کو پاکستان سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔

آسٹریلیا کی ڈیفنس فورس کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل ڈیوڈ ہرلے کے مطابق حکمت اللہ نامی اس سابق افغان فوجی کو پاکستان کی خفیہ ایجنسی انٹرسروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) نے رواں سال کے آغاز میں گرفتار کیا تھا۔ جسے گزشتہ روز افغانستان منتقل کر دیا گیا ہے جہاں اس پر 3 افراد کے قتل کا مقدمہ چلایا جا سکتا ہے۔ لیفٹیننٹ جنرل ڈیوڈ ہرلے کا کہنا تھا کہ حکمت اللہ کی گرفتاری سے انہیں فروری میں ہی آگاہ کر دیا گیا تھا تاہم اس کی افغانستان منتقلی میں تاخیر انتظامی معاملات کی وجہ سے ہوئی۔

افغان فوجی حکمت اللہ پر الزام ہے کہ اس نے گزشتہ سال اگست میں افغانستان کے صوبہ ارزگان میں فوجی اڈے پر موجود 3 آسٹریلوی فوجیوں کو فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا، اس واقعہ میں 2 آسٹریلوی فوجی زخمی بھی ہوئے ہوئے تھے۔

واضح رہے کہ افغانستان میں افغان فوجیوں کی جانب سے اتحادی افواج کے اہلکاروں پر حملوں میں 2012 میں بہت تیزی دیکھی گئی تھی۔ افغانستان میں آسٹریلیا کے 1550 فوجی موجود ہیں اور اب تک ان میں سے 7 افغان فوجیوں کے حملوں میں ہلاک ہوچکے ہیں

Post your comment

Your name:


Your comment:


Confirm:



* Please keep your comments clean. Max 400 chars.

Comments

Be the first to comment