ہم خود کو آخر حسد سے کب آزاد کریں گے، ہم چیزوں، واقعات اور عالمی اعزازات کو ان کی اصل ماہیت میں دیکھنا کب شروع کریں گے، ہم خود کو احساس کمتری سے کب باہر نکالیں گے۔


Post your comment

Your name:


Your comment:


Confirm:



* Please keep your comments clean. Max 400 chars.

Comments

Be the first to comment